60

وزیرستان: فوجی کارروائی میں پندرہ عسکریت پسند ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ
AFP

پاکستان کے قبائلی علاقے شمالی وزیرستان میں فوج کا کہنا ہے کہ شدت پسندوں کے ٹھکانوں پر فضائی حملوں اور ان کے ساتھ ہونے والی ایک جھڑپ میں کم سے کم پندرہ عسکریت پسند اور ایک سکیورٹی اہلکار ہلاک ہوگئے ہیں۔

فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کی طرف سے سنیچر کو جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ فوج کے گن شپ ہیلی کاپٹروں نے شمالی وزیرستان کے علاقے غلام خان میں غورشاٹئی کے مقام پر شدت پسندوں کے تین مراکز پر بمباری کی۔ بیان کے مطابق کارروائی میں شدت پسندوں کے مراکز اور بارود سے بھری تین گاڑیاں کو تباہ کردیا گیا۔ کارروائی میں بارہ عسکریت پسند مارے گئے ہیں۔

آئی ایس پی آر کے مطابق شمالی وزیرستان کے علاقے بویہ میں بھی سیکورٹی فورسز اور شدت پسندوں کے درمیان ہونے والی ایک جھڑپ میں تین عسکریت پسند مارے گئے جبکہ فائرنگ کے تبادلے میں سکیورٹی فورسز کے ایک نائب صوبیدار بھی ہلاک ہوئے۔

یاد رہے کہ شمالی وزیرستان میں گزشتہ تین مہنیوں سے عسکری تنظیموں کے خلاف آپریشن ضرب عضب جاری ہے۔ فوج کا دعویٰ ہے کہ ایجنسی کے تقریباً اسی فیصد علاقے کو شدت پسندوں سے آزاد کرا کے صاف کر دیا گیا ہے۔

یہ امر بھی اہم ہے کہ پاکستان فوج کے ترجمان میجر جنرل عاصم باجوہ نے چند دن پہلے بی بی سی سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہا تھا کہ شمالی وزیرستان میں جاری آپریشن کے باعث طالبان کی منظم حملہ کرنے کی صلاحیت ختم کردی گئی ہے۔

ادھر دوسری طرف صوبے خیبر پختونخوا کے ضلع سوات میں طالبان مخالف امن کمیٹیوں کے تین افراد کی ہلاکت کے واقعہ کے بعد وادی میں حالات آہستہ آہستہ معمول پر آنے شروع ہوگئے ہیں۔

تین دن پہلے سوات کے علاقوں براہ بانڈئی اور کبل میں مسلح افراد نے حکومتی حامی امن کمیٹیوں کے تین افراد کو الگ الگ واقعات میں فائرنگ کرکے ہلاک کردیا تھا۔ اس واقعہ کے بعد مقامی انتظامیہ نے سوات کے مختلف علاقوں میں کرفیو نافذ کرکے بڑے پیمانے پر گھر گھر سرچ آپریشن کا اغاز کر دیا تھا۔ مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ کرفیو کے نفاذ کی وجہ سے علاقے کے بیشتر تجارتی مراکز اور راستے بند کردیے گئے تھے جس کی وجہ سے عوام کو شدید مشکلات کا سامنا رہا ۔

خیال رہے کہ سوات میں ہدف بناکر قتل کے واقعات میں طالبان مخالف امن کمیٹیوں کے کئی افراد کو ہلاک کیا جاچکا ہے۔



Source link

Facebook Comments

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں