helping poor manners 72

خبردار محتاج کی امدادنہ کرنے کا انجام

خبردار محتاج کی امدادنہ کرنے کا انجام
رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:جو مسلمان کسی ننگے مسلمان کو لباس پہناتا ہے اللہ تعا لیٰ اسے جنت کا نہایت نفیس سبز لباس پہنائے گا اور جو مسلما ن کسی بھوکے مسلمان کو کھانا کھلاتا ہے اللہ تعالیٰ اسے کھانے کے لئے جنت کا پھل عطا فرمائے گا اور جو مسلمان کسی پیاسے کو پانی پلاتا ہے اللہ تعالیٰ اسے نہایت عمدہ شراب پینے کو عطا فرمائے گا اور غریب مسلمانوں کو کھلانے پلانے اور پہنانے سے اجر و انعام کا وعدہ اس شخص کے لئے ہے جو اس کام کو صرف اللہ تعا لیٰ کی رضا حاصل کرنے کے لئے کرے
ارشاد باری تعا لیٰ ہے
سورت الدہر میں فرمایا : اور وہ اس کی محبت پر کھانا کھلانے ہیں محتاج کو اور یتیم اور قیدی کو
اسی طرح حضور کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا اگر کسی شخص کے پاس چٹیل میدان میں فالتو پانی ہو اور مسافر کو نہ پلائے تو خدا تعا لیٰ قیامت کے دن اس پر رحمت کی نطر نہ ڈالے گا – پھر یہ خدمت خلق کا دائرہ جانوروں تک محیط ہے -آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے تاکید فرمائی کہ بھوکے جانور کو کھنا کھلانا اور پیاسے کو پانی پلانا بھی بہت بڑی نیکی ہے حتیٰ کہ ایک گنہگارکو محض اس وجہ سے بخش دیا گیا کہ اس نے پیاسے کتے کو پانی پلایا تھا اس کے برعلس ایک عورت کو اس وجہ سے جہنم میں دھکیلا گیا کہ اس نے ایک بلی کو باندھ کر کھنے پینے کی کوئی چیز نہ دی حتیٰ کہ بھوک سے مر گئی
ارشاد باری تعا لیٰ ہے
ترجمہ: کیا آپ نے اس شخص کو دیکھا جو روز جزا کو جھٹلاتا ہے – یہ وہی ہے جو یتیم کو دھکے دیتا ہے اور مسکین کو کھنا کھلانے کی ترغیب نہیں دیتا-(الماعون

Facebook Comments

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں